Today: Sunday, September, 24, 2017 Last Update: 05:11 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

   

مرکزی کابینہ میں مجوزہ تبدیلی آج!

مرکزی کابینہ میں مجوزہ تبدیلی آج!

 

وزیراعظم کی فہرست چونکانے والی ہوگی : بی جے پی ذرائع ، مجوزہ وزراء کو وزیراعظم نے اپنی رہائش گاہ پر چائے کیلئے مدعو کیا ، بہار پر خصوصی نوازش کا امکان ، سریش پر بھو کو ایمانداری کا مل سکتا ہے انعام،
مختار عباس نقوی کیساتھ این ڈی اے کے اکلوتے مسلم لوک سبھا رکن محبوب علی قیصر کو بھی وزارت مملکت کی ذمہ داری ملنے کا امکان، نجمہ ہپت اللہ پر کشمکش برقرار ، رام داس اٹھاولے کی برتھ بھی کنفرم

محمداحمد

نئی دہلی ،8نومبر ( ایس ٹی بیورو )بی جے پی ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق وزیر اعظم نریندر مودی اتوار کو اپنی کابینہ میں توسیع کرنے جا رہے ہیں۔ خبروں کے مطابق جن لوگوں کو کابینہ میں شامل کیا جائیگاان سب کو اطلاعات دے دی گئی ہیں اور ان میں سے بیشتر لوگ ملک کی راجدھانی دہلی میں پہونچ چکے ہیں ۔مجوزہ وزراء کو وزیراعظم نے اپنی رہائش گاہ پرچائے کیلئے مدعو کیا ہے ۔ مودی جو کہ اپنے منفرد انداز کیلئے جانے جاتے ہیں خبر یہ ہے کہ کابینہ میں کئی انوکھی تبدیلیاں کرسکتے ہیں ۔ کچھ قلمدان ایسے لوگوں کو مل سکتی ہیں جن کہ توقع بھی انہوں نے نہیں کی ہوگی ۔ مصدقہ ذرائع بتاتے ہیں کہ کئی وزراء کا جہاں بوجھ کم کیا جائے گا ۔ وہیں بہت سے وزرا ء کوپارٹی کیلئے کام کرنے کے نام پر چھٹی دی جاسکتی ہے ۔ تاہم ابھی کن لوگوں کی چھٹی ہوگی اس کی خبریں موصول نہیں ہوئی ہیں ، لیکن جن لوگوں کا بوجھ کم کیا جاسکتاہے ان میں مرکزی وزیر دفاع اروج جیٹلی اور پرکاش جاوڈیکر کانام قابل ذکر ہے ۔ خبریہ ہے کہ اقلیتی امور کی وزارت سے نجمہ ہپت اللہ کو چھٹی مل سکتی ہے ، کیونکہ ان کے خلاف فوٹو مارفنگ کا معاملہ چل رہا ہے ۔ ایسے میں اگر یہ معاملہ طول پکڑتا ہے تو حکومت آپوزیشن کے نشانہ پر آسکتی ہے اور حکومت کی کرکری ہوسکتی ہے ۔ خبروں کے مطابق مرکزی کابینہ کی نئی فہرست میں مختار عباس نقوی کو وزارت اطلاعات و نشریا ت کی ذمہ داری مل سکتی ہے ، جبکہ سدا نندگوڑا کی جگہ پر شیوسینا سے بی جے پی میں آئے سریش پربھو کو ریل کی ذمہ داری ملنے کا امکان ہے ۔ خبروں کے مطابق مسٹر پر بھو کو پیوش گوئل کی جگہ توانائی کی وزارت بھی مل سکتی ہے تاہم انہیں وزارت ریل کا مضبوط دعویدار مانا جارہاہے ۔ منوہر پاریکر کے گوا کے وزیراعلیٰ کے عہدے سے مستعفیٰ ہونے کے بعد اب اس بات کا قوی امکان ہے کہ انہیں ہی وزارت دفاع کی ذمہ داری دی جائے گی ۔ لیکن ان قیاس آرئیوں کے بیچ کئی اور نام آنے کا امکان ہے۔ پہلے خبر یہ تھی کہ اپنے متنازع بیان کیلئے مشہور گری راج سنگھ کی وزارت کیلئے برتھ کنفرم ہے ، لیکن اب خبر یہ ہے کہ انکی جگہ رام کرپال یادو لے سکتے ہیں ۔ کابینہ میں ایک اور نئے چہرے کے طورپر رام داس اٹھاولے کی شمولیت طے ہے اور خبر یہ ہے کہ انہیں سوشل جسٹس کی وزارت کی ذمہ داری دی جاسکتی ہے نیز تھاور چند گہلوت کو کسی دوسری وزارت میں بھیجا جاسکتاہے ۔ خیال رہے کہ مسٹر اٹھاولے اس سے قبل کئی وزارتوں میں اہم ذمہ داری انجام دے چکے ہیں اور انہوں نے لوک سبھا کیساتھ ساتھ مہاراشٹر اسمبلی الیکشن میں پوری طرح بی جے پی کو حمایت دی تھی اور اپنے کسی امیدوار کو نہیں کھڑا کیا تھا ۔ خبروں کے مطابق جہاں مرکز میں آر پی آئی کو اہم نمائندگی مل سکتی ہے وہیں ریاست مہارشٹر میں آر پی آئی کو ایم ایل سی کیساتھ ساتھ دیگر اہم عہدوں پرجگہ مل سکتی ہے ۔
اطلاعات کے مطابق 20نئے لوگوں کو وزات میں جگہ ملے گی ، لیکن یہ طے نہیں ہے کہ کس کو کون سی وزارت کی ذمہ داری ملے گی ۔ قیاس آرائیوں کے دوران بھارتیہ جنتا پارٹی کے ذرائع سے دیگر ممکنہ وزرا میں راجیو پرتاپ روڈی، سادھوی نرنجن جیوتی، چوہدری بیریندر سنگھ، جینت سنہا، راجیہ وردھن راٹھور، ساورلال جاٹ، ہے ہنسراج اہیر، وجے سانپلا، جے پی نڈڈا، بابل سپریو اور بندارو دتاتریہ کے نام شامل ہیں۔نئے وزراء کے آنے سے مودی کابینہ میں علاقائی توازن برقرار ہوگا اور جن وزراء کے پاس زیادہ وزارتوں کا چارج ہے انکے کام کا دباؤ کم ہوگا۔ کابینہ کی تازہ تبدیلی میں مرکز اور ریاست کے سیاسی حالات، کچھ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات وغیرہ کو بھی دھیان میں رکھے جانے کا امکان ہے۔

...


Advertisment

Advertisment